آئی پی ایل، سخت ترین ایس اوپیز،آسٹریلیا اور انگلینڈ کے کرکٹرزمصیبت میں

عمران عثمانی

آئی پی ایل کے لئے ایس اوپیز تیار ہوگئی ہیں،نہایت ہی سخت اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔متحدہ عرب امارات میں 19ستمبر سے شیڈول آئی پی ایل کے لئے منتظمین نے جو ڈرافٹ تیار کیا ہے اس کے مطابق نقل وحرکت پر پابندی ہوگی ،ہوٹل میں قید یا میچز کے علاوہ کچھ نہیں ہوسکے گا.عرب امارات پہنچنےوالے کرکٹرز کو ایک ہفتہ قرنطینہ میں گزارنا ہوگا ۔ہفتہ میں 4بار کووڈ-19 ٹیسٹ ہوگا۔ان پر عملدر آمد کے بغیر ٹریننگ یا میچز میں شرکت کی اجازت نہیں ہوگی اور سپورٹنگ اسٹاف کو بھی اس کی پابندی کرنی ہوگی۔کسی کو بھی 20 اگست سے قبل جانے کی اجازت نہیں ہوگی،کسی نے اپنی فیملی لے جانی ہوگی تو وہ بائیو سیکیور ببل سے باہر رہے گی،ہر ٹیم کے پاس اپنا ایک میڈیکل بورڈ ہوگا چنانچہ وہ فیملی کے ساتھ پہلے والی چہل پہل بھی نہیں ہوسکے گی.
عرب امارات جانے سے قبل 2کورونا ٹیسٹ ہونگے،دونوں ٹیسٹ کے درمیان 24 گھنٹے کا وقفہ ہوگا،روانگی سے قبل کسی کا ٹیسٹ منفی آگیا تو اسے 14 دن قرنطینہ میں گزارنے ہونگے،عرب امارات کے ایئرپورٹس پر ہر ایک کا کووڈ ٹیسٹ ہوگا،اس کے بعد ہوٹل روانگی ممکن ہوسکے گی،پھر ٹیم ہوٹل میں ہر ایک کو 7دن قرنطینہ میں گزارنے ہونگے۔
قرنطینہ والے ہفتہ کے دوران ہر ایک کے 3 کووڈ ٹیسٹ ہونگے،اس کے بعد ٹریننگ ممکن ہوگی،پھر ایونٹ کے اختتام تک ہر 5 ویں دن ایک کووڈ ٹیسٹ کیا جائے گا۔ایونٹ کے دوران کسی کا ٹیسٹ مثبت آگیا تو وہ ٹیم ہوٹل کے ایک خاص کمرے میں قرنطینہ میں چلا جائے گا۔
کسی رکن کو 53 دن کے دوران بائیو سیکیور ببل سے باہر جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔زخمی ہونے اور ہسپتال جانے کے لئے استثنیٰ بھی خاص شرائط کے ساتھ ہوگا،ہر ٹیم الگ الگ ہوٹل میں رہے گی،سوشل فاصلہ ہوگا،ماسک ودیگر سامان ساتھ ہوگا۔
ان شرائط وضوابط کے بعد آئی پی ایل کے ابتدائی میچز میں آسٹریلیا اور انگلینڈ کے کرکٹرز کی شرکت ناممکن ہوگئی ہے کیونکہ دونوں ممالک کے درمیان انگلینڈ میں آخری میچ 15 ستمبر کو کھیلا جانا ہے،وہ عرب امارات 17 سے 18 ستمبر تک پہنچیں گے اور 25 ستمبر سے قبل ٹریننگ بھی نہیں کرسکیں گے،آئی پی ایل شیڈول جب سامنے آئے گا تو واضح ہوگا کہ کون سا کھلاڑی کتنے میچ سے باہر ہوگیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں