آئی پی ایل,رنر اپ,چنائی سپر کنگز,مسلسل تیسرا فائنل

آئی پی ایل 2019کی رنر اپ چنائی سپر کنگزکے لئےمسلسل تیسرا فائنل کیوں مشکل

عمران عثمانی

آئی پی ایل کی دوسری ٹیم گزشتہ سال کی رنر اپ چنائی سپر کنگز ہے جو گزشتہ سال فتح کے قریب آکر بھی ٹرافی نہ اٹھاسکی تھی،2019کا سیزن یہ بتانے کو کافی تھا کہ یہ ٹیم باقیوں کی نسبت بہتر اور بھر پور فارم میں تھی۔ویسے تاریخ دیکھی جائے تو یہ مسلسل 2 سال سے فائنل میں آرہی ہے اوریہی نہیں بلکہ 2018کی تو وہ چیمپئن بھی رہی ہے،اس کے علاوہ اس نے 2010 اور 2011میں بھی یہ ٹیم آئی پی ایل فاتح رہی تھی۔اس کے کپتان ایم ایس دھونی ہیں جواپنی شخصیت اور نام کے اعتبار سے دوسروں پرلرزہ ڈالنے کو کافی ہیں۔اس ٹیم کو بڑا جھٹکا یہ لگا ہے کہ اسٹار بیٹسمین سریش رائنا اور ہر بھجن سنگھ نے آخری لمحات میں شرکت سے انکار کردیا ہے۔
آئی پی ایل، ممبئی انڈینزکے لئےاعزاز کے دفاع میں ناکامی یقینی،انگلش کرکٹر آئوٹ،کچھ انکشافات
فاف ڈو پلیسی،عمران طاہر اور جوش ہیزل ووڈ بہت بڑی طاقت ہیں،کیمپ میں انگلینڈ کے ابھرتے ہوئے کھلاڑی سام کرن شامل ہیں،ماضی میں اس ٹیم پر اسپاٹ فکسنگ کی مد میں 2 سالہ پابندی بھی لگی ہے لیکن اس کے بعد گزشتہ سالوں میں اس نے اپنا قد پھر سے بلند کیا ہے۔بھارت کے مہنگے ترین پلیئرز میں سے ایک پیوش چاولہ اور گزشہ سال کے لیڈنگ وکٹ ٹیکر عمران طاہر اپنی اسپن سے عرب امارات کی پچز پر چنائی سپر کنگز کا فاتح بنواسکتے ہیں۔
2018کی چیمپئن ،2019کی رنر اپ ٹیم مسلسل تیسرے فائنل کی امیدوار ہے لیکن اس بار اس لئے مشکل ہے کہ سریش رائنا وغیرہ نہیں ہیں اور کپتان خود تھکتے جارہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں